The heart is not broken yet

دل شکستہ نہیں ہوا اب تک

ہھے رائیگاں نہ آرزو اب تک

کے کوئی دل کا برا ہوتا نہیں

کچھ تو ہوا ہے انکے ساتھ برا اب تک

مناتا پیار سے گر کوئی انکو الم میں

تو پھینک دیتے وو ہتھیار اب تک

ہے ملک پہ میرے فضاء قضا چھائ ہوئی

بکھر گئے ہیں کتنے گھر اب تک

کے رنج میں یہ اپنا حال ہوا ہم وطنوں

کبھو نہ سوچا، نہ کیا سجدہ ء توبہ اب تک

اور برا کہتے ہیں ہم ملک کو اپنے کتنا

اور کِیے گر کتنے بیان ہیں اوروں کے اب تک

ذرا بھلا جو کیا ہوتا نہ ہم نے اسکا

تو کتنا نام بنا چکے ہوتے اسکا اب تک

کہ ابھو بھی ہے وقت پڑا، کرو تمہیں جو ہے کرنا

کہ "دیہ" ہم مانتے ہیں مثل " صبح کا بھلا شام کو لوٹا " اب تک

By: Sadia Umer

image: 

Zircon - This is a contributing Drupal Theme
Design by WeebPal.